AIOU Latest Jobs

AIOU Latest Jobs

AIOU Latest Jobs

Allama Iqbal Open University was established in May 1974 with the main objective of providing educational opportunities to the people and those who cannot leave their homes and jobs. Over the years, the university has lived up to that promise.

It has opened up educational opportunities for working people and given women access to their doors. He has also done significant work in the field of mass education. It is now breaking new ground in the fields of vocational, scientific and technical education. It is trying to reach remote areas of Pakistan. It is also trying to use modern information technology to promote education in Pakistan.

The idea of ​​distance education was first introduced in Britain in the late 60s by British Prime Minister Harold Wilson. He said that those who have been deprived of better education due to their early employment and want to upgrade their knowledge and skills should be provided educational opportunities in the evenings during the evening hours. The UK Open University was thus established in 1969. Since then it has become a major learning institution in the UK and has opened up opportunities for millions of working people. The good news of distance and open education has spread all over the world ever since. More than 60 open universities around the world are working based on distance education. Modern information technology has made distance learning much easier and more efficient.

AIOU, when founded in 1974, was the second open university in the world and the first in Asia and Africa. Thus, it is a testament to the foresight of the current policy makers. As AIOU’s past years have shown, distance education has opened up new opportunities for millions, especially women, and the efforts of the federal and provincial governments on a large scale and without burdening their resources.

The idea of ​​distance education gained more relevance and acceptance in Pakistan due to the factors of poverty and relative deprivation of women. Pakistan’s poor have very low literacy rates, dropout rates and higher education rates. Poverty rates are high in rural areas, where formal education is scarce. Due to poverty and conservative traditions, the literacy rate for women in Pakistan, especially in rural areas, is very low. Under the pressure of old traditions, many conservative parents do not allow their daughters to go out to school. AIOU, through its system of distance education, has thus provided educational opportunities to these housewives and women. This explains why the majority of university students are women.

Finally, the university is trying to meet another current need. Vocational and technical education in Pakistan is becoming very expensive, especially in recent years, due to the government’s policy of encouraging the private sector in these fields. The lower middle class and the poor are being marginalized and their children have little opportunity to pursue higher education in fields such as business administration, computer science, medicine and engineering. AIOU is working to meet this challenge and keep a window open for these classes by minimizing costs and creating a student support fund.

Establishment
Allama Iqbal Open University was established in May 1974 under Act No. XXXIX passed by the Parliament of Pakistan. It was initially renamed the People’s Open University, which was renamed the Allama Iqbal Open University in 1977 on the occasion of the first century of the national poet and philosopher Allama Muhammad Iqbal. The idea of ​​an “open university” was introduced in the 1972-80 education policy with broad principles in these words:
“In many countries, open universities are being used to provide education and training to people who cannot leave their homes and jobs for full-time education. Therefore, an open university will be set up to facilitate correspondence. Provide part-time educational facilities through courses, tutorials, seminars, workshops, laboratories, television and radio broadcasts and other mass media. “

Goals
The main objectives of the University as stated in the Act are as follows:

Providing educational facilities to people who cannot leave their homes and jobs in the way it can.
To provide such facilities to the people for their educational development as they can afford.
Facilitate teacher training in a way that they can determine.
Provide education in learning technology or professions that it deems appropriate, and arrange for research and advancement.

Aiou latest jobs

Download Advertisement below 👇👇👇👇

AIOU Latest Jobs
AIOU LATEST JOBS 2022
AIOU LATEST JOBS FORM


علامہ اقبال اوپن یونیورسٹی مئی 1974 میں قائم کی گئی تھی جس کا بنیادی مقصد عوام الناس اور ان لوگوں کو تعلیمی مواقع فراہم کرنا تھا جو اپنے گھر اور ملازمتیں نہیں چھوڑ سکتے۔ ان تمام پچھلے سالوں کے دوران، یونیورسٹی نے اس وعدے کو پورا کیا ہے۔

اس نے محنت کش لوگوں کے لیے تعلیمی مواقع کھولے ہیں اور خواتین کو ان کے دروازے پر رسائی فراہم کی ہے۔ اس نے ماس ایجوکیشن کے میدان میں بھی نمایاں کام کیا ہے۔ اب یہ پیشہ ورانہ، سائنسی اور تکنیکی تعلیم کے شعبوں میں نئی ​​بنیادیں توڑ رہا ہے۔ یہ پاکستان کے دور دراز علاقوں تک پہنچنے کی کوشش کر رہا ہے۔ یہ پاکستان میں تعلیم کے فروغ کے لیے جدید انفارمیشن ٹیکنالوجی کو بروئے کار لانے کی بھی کوشش کر رہا ہے۔

فاصلاتی تعلیم کا خیال پہلی بار برطانیہ میں 60 کی دہائی کے آخر میں برطانوی وزیر اعظم مسٹر ہیرالڈ ولسن نے پیش کیا تھا۔ ان کا خیال تھا کہ جو لوگ ابتدائی ملازمت کی وجہ سے بہتر تعلیم سے محروم ہو چکے ہیں اور اپنے علم اور ہنر کو اپ گریڈ کرنا چاہتے ہیں، ان کو اپنے فارغ اوقات میں شام کے اوقات میں تعلیمی مواقع فراہم کیے جائیں۔ یوکے اوپن یونیورسٹی اس طرح 1969 میں قائم ہوئی تھی۔ تب سے یہ برطانیہ میں سیکھنے کا ایک بڑا ادارہ بن گیا ہے اور اس نے لاکھوں کام کرنے والے لوگوں کے لیے مواقع کھولے ہیں۔ دوری اور کھلی تعلیم کی خوشخبری، تب سے پوری دنیا میں پھیل گئی ہے۔ دنیا بھر میں ساٹھ سے زائد اوپن یونیورسٹیاں فاصلاتی تعلیم کی بنیاد پر کام کر رہی ہیں۔ جدید انفارمیشن ٹیکنالوجی نے فاصلاتی تعلیم کے کام کو بہت آسان اور موثر بنا دیا ہے۔

Aiou latest jobs

AIOU، جب 1974 میں قائم ہوا، دنیا کی دوسری اوپن یونیورسٹی اور ایشیا اور افریقہ میں پہلی تھی۔ اس طرح یہ اس وقت کے پالیسی سازوں کی دور اندیشی کا منہ بولتا ثبوت ہے۔ جیسا کہ AIOU کے پچھلے سالوں نے ثابت کیا ہے، فاصلاتی تعلیم نے لاکھوں بالخصوص خواتین کے لیے نئے مواقع کھولے ہیں، اور وفاقی اور صوبائی حکومتوں کی کوششوں کو بڑے پیمانے پر اور وہ بھی ان کے وسائل پر بوجھ بنے بغیر۔

فاصلاتی تعلیم کے خیال نے غربت اور خواتین کی نسبتاً محرومی کے عوامل کی وجہ سے پاکستان میں زیادہ مطابقت اور قبولیت حاصل کی۔ پاکستان کے غریب طبقوں میں خواندگی کی شرح، تعلیم چھوڑنے کے واقعات اور اعلیٰ تعلیم کی زیادتی بہت کم ہے۔ غربت کے واقعات دیہی علاقوں میں بہت زیادہ ہیں، جہاں رسمی تعلیم بہت کم قائم ہے۔ غربت اور قدامت پسند روایات کی وجہ سے پاکستان میں خصوصاً دیہی علاقوں میں خواتین کے لیے خواندگی اور تعلیم کی شرح بہت کم ہے۔ پرانے زمانے کی روایات کے دباؤ میں بہت سے قدامت پسند والدین اپنی بیٹیوں کو باہر اسکول جانے کی اجازت نہیں دیتے۔ AIOU نے فاصلاتی تعلیم کے اپنے نظام کے ذریعے، اس طرح، ان گھریلو لڑکیوں اور خواتین کو تعلیمی مواقع فراہم کیے ہیں۔ یہ ان وجوہات کی وضاحت کرتا ہے کہ یونیورسٹی میں داخلہ لینے والے طلباء کی اکثریت خواتین کی ہے۔

آخر میں، یونیورسٹی ایک اور موجودہ ضرورت کو پورا کرنے کی کوشش کر رہی ہے۔ پاکستان میں پیشہ ورانہ اور تکنیکی تعلیم بہت مہنگی ہوتی جا رہی ہے، خاص طور پر حالیہ برسوں میں، ان شعبوں میں نجی شعبے کی حوصلہ افزائی کی حکومتی پالیسی کی وجہ سے۔ نچلے متوسط ​​اور غریب طبقے کو پسماندہ کیا جا رہا ہے اور ان کے بچوں کو بزنس ایڈمنسٹریشن، کمپیوٹر سائنس، میڈیسن اور انجینئرنگ جیسے شعبوں میں اعلیٰ تعلیم حاصل کرنے کے مواقع بہت کم ہیں۔ AIOU اس چیلنج کو پورا کرنے کی کوشش کر رہا ہے اور اخراجات کو کم سے کم رکھ کر اور طالب علم امدادی فنڈ بنا کر ان کلاسوں کے لیے ایک ونڈو کھلا رکھنے کی کوشش کر رہا ہے۔

Aiou latest jobs

اسٹیبلشمنٹ
علامہ اقبال اوپن یونیورسٹی مئی 1974 میں پاکستان کی پارلیمنٹ کے پاس کردہ ایکٹ نمبر XXXIX کے تحت قائم کی گئی تھی۔ اسے ابتدائی طور پر پیپلز اوپن یونیورسٹی کا نام دیا گیا تھا، جسے 1977 میں قومی شاعر اور فلسفی علامہ محمد اقبال کی پہلی صدی کے موقع پر علامہ اقبال اوپن یونیورسٹی کا نام دیا گیا تھا۔ “اوپن یونیورسٹی” کا نظریہ 1972-80 کی تعلیمی پالیسی میں وسیع اصولوں کے ساتھ ان الفاظ میں پیش کیا گیا تھا:
“کئی ممالک میں اوپن یونیورسٹیوں کا استعمال ایسے لوگوں کو تعلیم اور تربیت فراہم کرنے کے لیے کیا جا رہا ہے جو کل وقتی تعلیم کے لیے اپنا گھر اور نوکری نہیں چھوڑ سکتے۔ اس لیے ایک اوپن یونیورسٹی قائم کی جائے گی تاکہ خط و کتابت کے کورسز، ٹیوٹوریلز، کے ذریعے پارٹ ٹائم تعلیمی سہولیات فراہم کی جا سکیں۔ سیمینارز، ورکشاپس، لیبارٹریز، ٹیلی ویژن اور ریڈیو نشریات اور دیگر ابلاغ عامہ کے ذرائع ابلاغ…”

مقاصد
یونیورسٹی کے بنیادی مقاصد جیسا کہ ایکٹ میں بیان کیا گیا ہے درج ذیل ہیں:

ایسے لوگوں کو تعلیمی سہولیات فراہم کرنا جو اپنا گھر اور ملازمتیں اس انداز میں نہیں چھوڑ سکتے جیسا کہ یہ طے کر سکتا ہے۔
عوام کو ان کی تعلیمی ترقی کے لیے اس طرح کی سہولیات فراہم کرنا جیسا کہ وہ طے کر سکتا ہے۔
اساتذہ کی تربیت کے لیے اس طریقے سے سہولیات فراہم کرنا جس کا وہ تعین کر سکے۔
سیکھنے کی ٹکنالوجی یا پیشہ کی ایسی شاخوں میں تعلیم فراہم کرنا جو اسے مناسب سمجھے، اور تحقیق اور پیش قدمی کے لیے بندوبست کرنا۔

Aiou latest jobs

This website is best to find Government jobs of your own choice. We collected different government jobs from different newspapers. We provide you with the exact qualifications and other details about the post. You can find the latest government jobs on this website.
Government jobs link 1 👇👇👇👇👇👇👇👇
https://seoarticles4all.com/sitemap/
Government jobs Link 2 👇👇👇👇👇
https://www.aiouhelps.com/p/sitemap.html?m=1
Join us on Whatsapp👇👇👇👇
https://chat.whatsapp.com/GYzeONTnmZ75HWidY3rUjJ
Join us on Facebook 👇👇👇👇
https://m.facebook.com/Englishliterature147/
Join us on our Youtube channel 👇👇👇
https://youtube.com/channel/UCGdJzqKVWCYxW0WgK1Oj9zA
Join Us on Telegram 👇👇👇👇👇
https://t.me/+gPj5ZxCk0Wk5MDU0
Join us on Twitter 👇👇👇👇👇👇
https://twitter.com/Majid_writer?t=Ob81WbPDHuo1JM9xAUo8Tw&s=09
Join Us on Linkedin
https://www.linkedin.com/in/majid-farooq-76a0ab12b

Leave a Comment

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.

%d bloggers like this: